Bukhara & Multan to be declared as sister cities ‏بخارا اور ملتان کو سسٹر سٹی قرار دینے کا فیصلہ‏

‏بخارا اور ملتان کو سسٹر سٹی قرار دینے کا فیصلہ‏

‏نگران وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے پیر کے روز ازبکستان میں گورنر بخارا جناب بوتر زریپوف سے مفید ملاقات کی جس کے دوران بخارا اور ملتان کو سسٹر سٹی قرار دینے کی تجویز پر اتفاق رائے ہوا۔‏

‏اجلاس میں ملتان اور بخارا دونوں کو سسٹر سٹی قرار دینے کے حوالے سے خیالات کا تبادلہ کیا گیا اور اس سلسلے میں ضروری اقدامات اٹھانے پر بھی اتفاق کیا گیا۔‏

‏گورنر بوٹیر زریپوف سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوفی ازم ہمارا مشترکہ ورثہ ہے، ملتان اور بخارا کو سسٹر سٹی کے طور پر جوڑنے سے صوفی ازم اور مذہبی ثقافت کو مزید فروغ ملے گا۔‏

‏پاکستان اور ازبکستان تاریخی، مذہبی اور ثقافتی رشتوں میں بندھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ازبکستان نے زرعی شعبے میں انقلابی اصلاحات کے ذریعے اپنی معیشت کو مستحکم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ازبکستان کے زرعی اقدامات سے پاکستان بالخصوص پنجاب کو فائدہ ہوگا۔‏

‏یہاں موصول ہونے والے پیغام کے مطابق وزیراعلیٰ نے کپاس اور گندم کی کاشت کے لئے بہتر بیج تیار کرنے میں ازبکستان کے تجربات سے استفادہ کرنے پر زور دیا۔ صوبہ پنجاب اور ازبکستان کی مشترکہ کمیٹی زرعی تعاون کیلئے فوری اقدامات کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ازبکستان کے درمیان سڑک رابطے سے سیاحت کو فروغ ملے گا۔ انہوں نے مزید کہا، “ہم اپنی زرعی معیشت کو بحال کرنے کے لئے پرعزم ہیں۔‏

‏گورنر بوتر زریپوف نے وزیراعلیٰ محسن نقوی اور ان کے وفد کا بخارا ایئرپورٹ پہنچنے پر خیر مقدم کیا اور مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے پنجاب حکومت کے ساتھ زراعت، بیج وں کی ترقی اور دیگر شعبوں میں تعاون بڑھانے کے ارادے کا اظہار کیا۔‏

‏قبل ازیں وفد نے تاشقند میں کپاس کی جدید فیکٹری اور کپاس کے کھیتوں کا دورہ کیا۔ وزیراعلیٰ نے فیکٹری میں جدید مشینری اور کاٹن پروسیسنگ آپریشنز کا معائنہ کیا۔ انہوں نے کاٹن فیکٹری میں جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کو سراہا اور جدید مشینری کے استعمال میں مزید اقدامات کی حوصلہ افزائی کی۔‏

‏ازبک حکام نے وزیراعلیٰ پنجاب اور پنجاب حکومت کے وفد کو کاٹن فیکٹری میں جدید مشینری کے استعمال کے فوائد سے آگاہ کیا۔ پنجاب میں بھی اسی طرح کی جدید کپاس کی فیکٹریاں قائم کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ اس تناظر میں ازبک حکومت کے ساتھ تعاون کو وسعت دی جائے گی۔‏

‏وفد نے کپاس کے کھیتوں کا بھی دورہ کیا اور کپاس کی بہتر پیداوار کے حصول میں ازبک زرعی ماہرین کی کاوشوں کو سراہا۔ وزیراعلیٰ نے پنجاب میں کپاس کی پیداوار بڑھانے کیلئے ازبکستان کی مہارت اور تجربے سے فائدہ اٹھانے پر زور دیا۔‏

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *